Author's Guide Line

Instructions for Authors

Journal of Islamic Theology (JIT) is a bi-Annual research journal publishing research papers in three languages ​​(Urdu, Arabic and English) in association with a private society “Saharaa”. The initial editorial review of the submitted research papers is carried out and, if successful, the papers are then sent for review to two experts of the relevant subject.

Submitting an article to the journal Islamic Theology means that it is a genuine, unpublished, non-plagiarized article by the author. In case of any complications, the responsibility rests upon the author.

For the purpose of publishing articles in the Journal of Islamic Theology, it is necessary to adopt the same methodology which is prevalent among the researchers of Islamic sciences. Moreover, the following instruction may be followed

1. The article should be in MS Word format. INPAGE or PDF, copy will not be accepted at all. All articles should be submitted online through OJS system.

2. Arabic papers should be in Traditional Arabic font while Urdu Papers should be in

NooriNastaliq. English papers should in Time Roman                                       

3. To keep the difference betweenQur'anic texts and other quotations, copy the verses from the software and enclose them in parentheses. It is important for the Arabic writer to take special care of this.

4. Adopt the "Chicago-Manual" style for footnotes and references. When writing, give preference to the famous name, followed by the name of the book, publisher, publishing date, Volume and Page no.

5. Hadith and Arabic quotation must be without desinential inflection ((اعرابIn case of writing hadith number, there is no need to write volume and page.

6. After writing the complete in-text citation for the first time, the name, volume and page of the book should be sufficient for next citation.

7. All sources and references must be more automatic. The use of parentheses for references should be avoided. However, an appropriate place for sketches and maps should be chosen.

8. It is necessary to write in Roman English and to transliterate Arabic terms. For this purpose, help can be obtained from the table given in the journal website.

7. English translation of the titles of Urdu-Arabic articles, English abstract, key words, and sub-headings established for the scope of the article should be highlighted. In the margin, it is necessary to write the name of the writer, academic position, e-mail address and related institution.

8. At the end of the article, it is important to mention the results, if any, in a comprehensive manner.

9. Since this Journal is dedicated to Islamic sciences, irrelevant articles will not be published.

10. The article should be creative, in accordance with the principles of research, embellished with spelling codes and composition and free of spelling mistakes. An article devoid of these attributes will not be considered for publication.

11. The editor of the Journal does not necessarily agree with the views/opinion published in the Journal of Islamic Theology.

12. An article sent to the Journal of Islamic Theology will be considered its property. In case of non-publication, the same shall not be returned.

14. The Journal has the right not to publish submitted articles without giving any reason.

15. The authors whose papers are published in the Journal will be given two copies of the relevant issue.

16. Those who wish to publish an article in the Journal must submit articles before March for the first issue and before September for the second.

17. Online submission of articles through (OJS) is required, details of which are available on the website of the Journal. According to the online journal system, the author should first register and then submit the article through (OJS).

ہدایات برائے مقالہ نگاران

  مجلہ اسلامک تھیالوجی (JIT)  شش ماہی تحقیقی مجلہ ہے جو تین زبانوں (اردو ،عربی اور انگلش )میں شائع کیا جاتاہے ۔جس  کا مقصدعلوم اسلامیہ  کے شائقین میں  تحقیق کےذوق کوفروغ دینا ہے ۔موصول ہونےوالے مضامین کی اشاعت سے قبل  ابتدائی  ادارتی چھا ن پھٹک کی جاتی ہے ۔اور پھر اشاعت /اور عدم کے بارے میں انتہائی رازداری  سے شعبہ علوم اسلامیہ کے دو ماہرین   کی رائے  کے لیے ارسال کیاجاتا ہے ہے   مثبت رائے کی صورت میں مضمون قابل  اشاعت تصوّر کیا جاتا ہے ۔

مجلہ اسلامک تھیالوجی کو مضمون ارسال کرنے کا مطلب یہ ہے کہ یہ مضمون نویس  کاحقیقی، غیر مطبوعہ،   سرقہ سے  مبراء مضمون ہے۔جس کی  تمام تر ذمہ داری  مضمون نویس پر عائد ہوگی  ۔ نیز مضمون نویس کے لیے ویب سائیٹ پر موجود حلف نامہ (Under Taking)پر دستخط ضروری  ہیں۔جوویب سائیٹ سے  ڈ اؤن لوڈ کیا جا سکتا ہے۔

مجلہ  اسلامک تھیالوجی میں مضامین  شائع کروانے  کے متمنّی کےلیے مضمون  نویسی  میں وہی منہج اپنانا ضروری ہے جو علوم اسلامیہ کے محققین  میں رائج  ہے ۔مضمون نویس حضرات  کی سہولت کے لیے مضمون کو متذکرہ اسلوب پر ڈہالنے کے لیے  درج ذیل چند امور کی نشاندہی کی جاتی ہے۔

1-تمام مضامین جرنل کی  افیشل ویب سائٹس  سے آئن لائن  بھیجے جائیں ۔

2۔ اردو مقالے کا فانٹ جمیل نوری نستعلیق میں اور عربی فانٹ   (TREDIONAL ARABIC) جبکہ انگلش مقالے کا فانٹ ٹائم رومن میں ہونا چاہئیے۔صفحات کی تعداد 10سے20 کے درمیان ہونی چاہئیے جس میں ادارہ کمی یا زیادت کا مجاز ہے۔

3 ۔قرآنی نصوص اور دیگر اقتباسات میں فرق ملحوظ رکھنے کے لیے   آیات   کریمہ کو سافٹ ویئرسے کاپی کر   کے قوسین ﴿ ﴾ میں بند کریں۔ عربی مضمون نویس کے لیے اس کا خاص خیال رکھنا ضروری ہے ۔

4۔ حواشی اور حوالہ جات کے لیے’’ شگاگومینویل ‘‘طرز کو اپنایاجائے۔ لکھتے وقت مشہور نام کو مقدم کریں ،اس کے بعدنام پھر کتاب   ،مکتبہ ،طبع، سن طباعت ،جلد اور صفحہ لکھنا چاہئیے۔

5۔حدیث  اورعربی اقتباس کوبغیر اعراب کے ہونا ضروری ہے ۔حدیث نمبر لکھنے کی صورت میں جلد اور صفحہ لکھنے کی ضرورت نہیں

6۔ مکررحوالہ جات میں پہلی بار  مکمل حوالہ تحریر کرنے کے بعد کتاب کے نام ،جلد اور صفحہ پر اکتفا کیا جائے۔

7۔تمام مصادر و مراجع (Endnote) میں اورخودکار (Automatic) ہونا ضروری ہیں ۔حوالہ جات کے لیے قوسین کے استعمال سے اجتناب کرنا چاہئیے ۔البتہ خاکوں اور نقسہ جات کے لیے موزوں جگہ کا انتخاب کرنا چاہیئے۔

8۔مصادر اور مراجع رومن انگلش میں تحریر کرنا اور عربی اصطلاحات کی(TRANSLITERATION) کرنا ضروری ہے۔جس کے لیے اس کے جدول سے مدد لی جاسکتی ہے۔

9۔اردو عربی مضامین کے عنوانات کا انگریزی ترجمہ ، انگریزی خلاصہ (Abstract) ،کم ا زکم پانچ کلیدی الفاظ (key words) لکھنا،مضمون کے احاطے کے لیے قائم کیے گئے ذیلی عنوانات کو نمایاں کیا جائے۔ اورحاشیہ میں مضمون نگار کانام ،علمی منصب ،ای میل ایڈرس اورمتعلقہ ادارہ لکھنا ضروری ہے۔

10۔ مضمون کے آخر میں   نتائج ،اور سفارشات  کو جامع انداز میں ذکرکرنا ضروری ہے ۔

11۔چونکہ یہ مجلہ علوم اسلامیہ کے لیے مختص ہے اس لیے   غیر متعلقہ مضمون ناقابل اشاعت ہوگا۔

12۔مضمون تخلیقی ،تحقیق کے اصولوں کے عین مطابق ،املاء وانشاء کے رموز سے مزیّن،کمپوزنگ اور املائی غلطیوں سے خالی ہونا چاہئیے۔مذکورہ صفات سے عاری مضمون کو اشاعت کے قابل نہیں سمجھا جائے گا۔

13۔مجلہ اسلامک تھیالوجی میں طبع شدہ مواد کے ساتھ مجلے کے ایڈیٹر کا متفق ہونا ضروری نہیں جس کی ذمہ داری مضمون نگار یا مترجم پر   عائد ہوگی ۔

14۔مجلہ اسلامک تھیا لوجی کو ارسال کیا گیا   مضمون اس کی ملکیت تصوّر کیا جائے گا شائع نہ ہونےکی صورت میں واپسی کا دعویٰ ناقابل قبول ہوگا۔

 15۔مجلہ اسلامک تھیالوجی کو بھیجے گئے مضامین میں ضروری ادارتی ترمیم ،تنسیخ وتلخیص کا حق حاصل ہوگا۔

16۔مجلہ اسلامک تھیالوجی کو بھیجے گئے   مضامین کو بغیر کوئی وجہ بتائے شائع نہ کرنے کا حق حاصل ہے۔

17۔مضمون نگار کو متعلقہ شمارے کی دوکاپیاں دی جائیں گیں ۔

18۔مجلہ میں مضمون شائع کروانے والے خواہشمند حضرات کا پہلے شمار کے کے لیے مارچ سے پہلے اور دوسرے کےلیے ستمبر سے پہلے مضامین کا ارسال کرنا ضروری ہے ۔

نوٹ :مضامین کی آن لائن ترسیلات   بذریعہ (OJS) ضروری ہےجس کی تفصیلات مجلے کی ویب سائیٹ پر موجود ہیں یعنی آن لائن جرنل سسٹم کے مطابق مضمون نگار پہلے اپنا اندراج کرائے اس کے بعد بذریعہ (OJS) مضمون بھیجیں